محبت فرض ہے فرضی نہیں ہے

Poet:
By: BA SHAKIR, Lahore

محبت فرض ہے فرضی نہیں ہے
سرا سر مرض ہے مرضی نہیں ہے

محبت کا نتیجہ یہ رہا ہے
کہ دل میں درز ہے درزی نہیں ہے

ہوا ہے بر سبیل تذکرہ لو
کیا ہے عرض یہ عرضی نہیں ہے

حقیقت کیا ہے سن کر روح سب کی
لرز جائے گی جو لرزی نہیں ہے

کسی سے کیا غرض شاکر کو لیکن
غرض ہے آپ سے غرضی نہیں ہے

Rate it:
09 Sep, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: BA SHAKIR
Visit Other Poetries by BA SHAKIR »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City