انگلینڈ کی اپنی ٹیم ہی نہیں تھی

لندن(قومی اخبارنیوز) ورلڈکپ کرکٹ میں انگلینڈ واحد ٹیم ہے جس کے نصف سے زیادہ کھلاڑی اس کے اپنے نہیں ہیں ۔

انگلینڈ کی ٹیم میں کپتان مورگن سمیت سات کھلاڑی ایسے ہیں جن کی جڑیں انگلینڈ میں نہیںہیں۔

اوئن مورگن نے آ ئرلینڈ کی جانب سے اسکاٹ لینڈ کے خلاف اپنا پہلا میچ کھیلا تھا اور انھوں نے آ ئرلینڈ کے لیے سنچری بھی اسکور کر رکھی ہے ۔

مورگن خود اگر آ ئرش ہیں تو فائنل میں انگلینڈ کی جیت میں کلیدی کردار ادا کرنے والے بین اسٹوکس کی پیدائش اسی ملک یعنی نیوزی لینڈ کی ہے جس کے خلاف وہ فتح گر ثابت ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں : اسٹوکس نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں پیدا ہوئے تھے جبکہ ان کے والد جیرالڈ سٹوکس نے رگبی لیگ میں نیوزی لینڈ کی نمائندگی کی تھی۔

اسٹوکس کے علاوہ انگلش ٹیم کا ایک اور کھلاڑی جو اس ورلڈ کپ میں اپنی دھواں دھار بلے بازی کے لیے جانا جاتا رہا وہ اوپنر جیسن رائے تھے۔

دلچسپ امر یہ ہے کہ جیسن رائے کی جائے پیدائش بھی انگلینڈ نہیں ہے۔ وہ دراصل جنوبی افریقہ میں پیدا ہوئے تھے۔

انگلش ٹیم میں دو پاکستان نژاد کھلاڑی بھی ہیں۔ ان میں سے معین علی کے دادا پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر کے علاقے میرپور سے نقل مکانی کر کے انگلینڈ آ ئے تھے لیکن معین علی خود برمنگھم میں پیدا ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں : معین علی کے علاوہ اس فاتح سکواڈ میں دوسرا نام عادل رشید کا ہے۔ وہی عادل رشید جنھوں نے بقول مورگن انھیں بتایا تھا کہ ’اللہ بھی انگلش ٹیم کے ساتھ ہے۔

عادل رشید کے آ باﺅاجداد کا تعلق بھی پاکستان سے ہے۔ عادل نے سیمی فائنل میں تین وکٹیں لے کر اپنی ٹیم کی فائنل تک رسائی میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

ورلڈ کپ کے فائنل میں سپر اوور پھینکنے والے جوفرا آ رچر کا تعلق ویسٹ انڈیز کے جزیرے بارباڈوس سے ہے۔جوفرا نے ویسٹ انڈیز کی انڈر 19 ٹیم کی نمائندگی بھی کی

یہ بھی پڑھیں : بعد میں انھوں نے انگلینڈ کی جانب سے کھیلنے کا فیصلہ کیا جو کہ نہ صرف ان کے لیے بلکہ انگلینڈ کے لیے انتہائی کارآ مد ثابت ہوا ہے۔

ورلڈ کپ کے لیے انگلش اسکواڈ میں آ ل راﺅنڈر ٹام کرن بھی شامل تھے لیکن انھیں کسی میچ میں کھیلنے کا موقع نہیں مل سکا۔

وہ زمبابوے کے سابق اسٹار کیون کرن کے بیٹے ہیں لیکن ان کی پیدائش جنوبی افریقہ میں ہوئی اور انھوں نے ابتدائی کرکٹ وہیں کھیلی۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.