رانا ثناءاللہ کے خلاف تمام ثبوت موجود ہیں، شہریار آفریدی کا دعویٰ

رانا ثناءاللہ کے خلاف تمام ثبوت موجود ہیں، شہریار آفریدی کا دعویٰاسلام آباد: (16 جولائی 2019) وزیر مملکت برائے سیفران شہریار آفریدی نے دعویٰ کیا ہے کہ رانا ثناءاللہ کے خلاف تمام ثبوت موجود ہیں جو عدالت میں پیش کیے جائیں گے۔ ہم انتقامی کارروائیوں پر یقین نہیں رکھتے، ہم مقدس گائے کا تاثر ختم کر رہے ہیں۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے شہریار آفریدی نے کہا کہ پاکستان کی اینٹی نارکوٹس فورس ایک پیشہ ورانہ فورس ہے جو انتقامی کارروائیوں پر یقین نہیں رکھتی۔ دنیا بھر میں پاکستان میں اے این ایف کی سزا کی شرح 98 فیصد ہے، یہ لوگ کسی کو پھنسانے کا کام نہیں کرتے۔

انہوں نے کہا کہ رانا ثناءاللہ کی گاڑی کی تین ہفتے تک مانیٹرنگ کی گئی۔ جب انہیں روکا گیا تو ان سے پوچھا یہ آپ کا سامان ہے؟ جس پر رانا ثناءاللہ نے اپنے سامان کی تصدیق کی۔ ان کا سامان بھی ان سے پوچھ کر کھولا گیا۔

وزیر مملکت نے کہا کہ قانون سے کوئی بالاتر نہیں، خواجہ آصف کو رب کی قسم ہے وہ رانا ثناءاللہ سے ان کی اولاد کی قسم لے کر پوچھیں یہ سامان کس کا ہے؟ اُن کی آنکھیں بتادیں گی۔ اگر کسی کے ذہن میں ہے کہ یہ ہم نے کیا، تو اللہ ہمیں سزا دے گا۔

شہریار آفریدی نے دعویٰ کیا کہ رانا ثناءاللہ کے خلاف تمام ثبوت موجود ہیں، عدالت میں چیزیں جائیں گی۔ کہا جارہا ہے جوڈیشل ریمانڈ کیوں لیا، جسمانی ریمانڈ جب لیتے ہیں جب رنگے ہاتھوں نہ پکڑا ہو۔ ان کو رنگے ہاتھوں پکڑا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ہم انتقامی کارروائیوں پر یقین نہیں رکھتے، ہم مقدس گائے کا تاثر ختم کررہے ہیں۔ ہمیں کسی نے نہیں بتایا کہ اس کو نشانہ بنائیں۔ جان جاتی ہے تو جائے لیکن کمپرومائز نہیں کروں گا۔

شہریار آفریدی نے کہا کہ رانا ثناءاللہ سے کہیں عدالت میں پیش ہوکر خود کو کلیئر کریں۔ ملک کی عزت اور ناموس کے ساتھ کھیلنے کی سیاست نہ کریں۔ آپ (ن لیگ) بغیر سوچے سمجھے رانا ثناءاللہ کے ساتھ کھڑے ہیں۔

وزیر مملکت برائے سیفران نے مزید کہا کہ پاکستان سب کا ہے، تمام جماعتوں کیلئے ہمارے دروازے کھلے ہیں۔ یہ تجاویز لائیں گے، ہم خوش آمدید کہیں گے۔ لیکن جو پاکستان، آئین اور قانون کی خلاف ورزی کرے گا اسے مثال بنادیں گے۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.