اومیکرون: امریکا اور جرمنی میں وبا کے پھیلاؤ کو روکنے کیلیے سخت پابندیوں کا نفاذ

image
امریکا میں کورونا وائرس کی نئی قسم اومیکرون کی تصدیق کے بعد بائیڈن انتظامیہ نے ملک میں داخلے کے قوانین مزید سخت کردیے۔ دوسری جانب جرمنی میں ویکسین نہ لگوانے والے افراد اسٹورز، ثقافتی اور تفریحی مقامات میں داخل نہیں ہو سکیں گے۔

آئندہ ہفتے سے امریکا روانگی سے پہلے تمام مسافروں کو کورونا وائرس کے ٹیسٹ کی منفی رپورٹ پیش کرنا ہوگی جو چوبیس گھنٹے سے زیادہ پرانی نہ ہو۔ ان احکامات کا اطلاق امریکی شہریوں سمیت دیگر غیرملکی افراد پر ہوگا۔ بغیر کورونا ویکسین لگوائے امریکا میں داخلے کی اجازت نہیں ہوگی۔

جرمنی میں چانسلر اینگلا مرکل کی تمام 16 ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ سے ملاقات میں فیصلہ کیا گیا کہ ویکسین نہ لگوانے افراد کو مختلف پابندیوں کا سامنا کرنا ہوگا اور وہ اسٹورز، ثقافتی اور تفریحی مقامات میں داخل نہیں ہو سکیں گے۔ اسکولوں میں ماسک پہننا لازمی ہوگا اس کے علاوہ افراد کے جمع ہونے کی حد بھی کم کر دی گئی۔

جرمن چانسلر اینگلا مرکل نے اجلاس کے بعد کہا کہ رواں برس کے اختتام تک 30 ملین کورونا ویکسین خوراکیں لگائی جائیں گی۔ یہ فیصلہ ایسے وقت میں کیا گیا جب جرمنی میں ایک دن میں 70 ہزار سے زائد افراد میں کورونا انفیکشن کی تشخیص ہوئی ہے۔ اس وقت جرمنی میں مجموعی آبادی کے 68.4 فیصد کو کورونا ویکسین کی دونوں خوراکیں لگائی جا چکی ہیں اور کئی افراد کو بوسٹر شاٹس بھی لگائے جا چکے ہیں۔

Square Adsence 300X250

News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.