آج میرے درد کا وہ جائزہ لیتے رہے

Poet: Aslam sabir
By: Aslam sabir, Mianwali

آج میرے درد کا وہ جائزہ لیتے رہے
جینے کو کیا ہے بچا وہ جائزہ لیتے رہے

موت بھی دیتی رہی دستک مسیحا دیکھتے
خوب میرے جسم کا وہ جائزہ لیتے رہے

نفرتوں کا پانی تھا بنیادوں میں پھیلا ہوا
یہ مکاں کیسے گرا وہ جائزہ لیتے رہے

ظلم کے ہر وار پر میں دیکھتا تھا آسماں
کیا کرے گا اب خدا وہ جائزہ لیتے رہے

زندگی کی مشکلوں میں اس قدر صابر رہا
اس بلا کے صبر کا وہ جائزہ لیتے رہے

Rate it:
15 Mar, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Aslam sabir
Visit 4 Other Poetries by Aslam sabir »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City