اتری نہیں جو روشنی دل کے مکان میں

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

اتری نہیں جو روشنی دل کے مکان میں
کہنا نہیں ہے کچھ مجھے سورج کی شان میں

زخموں کے ساتھ دفن ہے میرا وجود بھی
زندہ ہوں دیکھنے کو مگر کب ہوں جان میں

یہ پنچھی تیری سوچ کے اڑتے بھی اب نہیں
یادوں کے کتنے تیر ہیں لیکن کمان میں

وہ چاہتا ہے شاعری میں اس کا ذکر ہو
رہتا نہیں ہے دل کے مگر خاندان میں

ان خواہشوں پہ اب مرا اتنا بھی حق نہیں
کیا کیا چھپا کے رکھا ہے جذبوں کی کان میں

اس کی بھی کٹ ہی جائے گی صحرا میں زندگی
جو رکھ گیا تھا پیار کا دریا گمان میں

پھر بڑھ رہا ہے درد میں بکھرا ہوا سکوت
خاموشیوں کا راج ہے وشمہ جہان میں

Rate it:
14 Jan, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4524 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City