ایسا ہو نہیں سکتا

Poet: نعمان صدیقی
By: Noman Baqi Siddiqi, Karachi

ایسا نہیں کہ مجھ سے ایسا ہو نہیں سکتا
پایا ہے اُس کو جیسا ، ویسا کھو نہیں سکتا

لاکھ ہونگے زندگی میں خوب اور خوب تر
اس دنیا میں ، اب تُم جیسا ، ہو نہیں سکتا

ہنستا ہے ہنستا رہے ، جو مجھ پہ زمانہ
ہنسنے والا کیا کبھی پھر رو نہیں سکتا

داغ بے شک لگ چُکا ہے جُرم بھی میں کر چُکا
توبہ کر کےمیں اُسے کیا دھو نہیں سکتا

سوتا رہے اگر وہ تو ، میں جاگتا رہوں
وہ رہے گر جاگتا ، میں سو نہیں سکتا

اُٹھ بھی جاؤ نعمان اب وہ جا چُکا ہے گھر
تُم اُسے لے آؤ ، کیا یہ ہو نہیں سکتا؟
 

Rate it:
05 Oct, 2018

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Noman Baqi Siddiqi
Visit 63 Other Poetries by Noman Baqi Siddiqi »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City