ایک عزیز کی موت پر

Poet: Hassan Kayani
By: Hassan Kayanil, Leeds (UK)

کوئی آج ھم سے تا ابد جدا ھو گیاھے
وفاؤں کے آگے کیسے ھوا ھو گیا ھے

درد سے تو اسکو خلاصی مل گئی ھے
زمانے کا قرض بھی ادا ھو گیا ھے

جدائی کے ستم سہتے سہتے یہ دل
اب تو غموں کا ٹھکانا ھو گیا ھے

اجل نے بڑھ کر گھر کا دیا بجھا دیا
چلو آندھیوں کا تو بھلا ھو گیا ھے

آؤ جلا دیں آج پھر بجھتے ھوئے چراغ
فرقت سے اسکی اندھیرہ ھو گیا ھے

جو کبھی کسی کو خاطر میں لاتا نہ تھا
آج اونچا مکان ویران راستہ ھو گیا ھے

ساقی سے کہو اپنے پیمانے اٹھا لے جائے
کہلا د و آج سے حسن پارسا ھو گیا ھے

Rate it:
06 Oct, 2016

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Hassan Kayanil
Visit 122 Other Poetries by Hassan Kayanil »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City