بنت آدم

Poet: Asif Jaleel
By: Asif Jaleel, India

عورت کو فقط
حوا کی بیٹی نہ کہیے
یہ آدم کی اولاد بھی ہے
پھر اتنی تذلیل کس لئے
ہر گالی اس کے نام سے منسوب کس لئے
اس ذات کی یہ تحقیر کس لئے
اپنی ماں،بیٹی بہن کی
کہ جن کی عزت کے رکھوالے ہو تم
پاس و لحاظ والے ہو تم
یہی بیٹی جب غیر کی ہو تو
نظروں سے تولتے ہو تم
پلکوں سے نوچتے ہو تم
سُنو ائے ابن آدم
تم عورت سے ہو کیوں اس قدر تنگ؟
کہ وجۂ تخلیق بن کر
جس نے اس دھرتی پہ تم کو لایا
اسی کو تم نے زندہ کیوں جلایا
کہیں ہم نے دیکھے
کلیوں کے سودے
وہ مرجھا گئے
جو تھے ننھے سے پودے
اس قدر تضاد کیوں ہے؟
یہ فطرت برباد کیوں ہے؟
تُو اس کو نوچ کر بھی
شاد وآباد کیوں ہے،
تجھ میں ہوس کی
اتنی پیاس کیوں ہے۔۔
تیرا احساس کھوگیا ہے کہاں

Rate it:
05 Mar, 2015

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Asif Jaleel
WARNING: I have an attitude and I know how to use it!.

میں عزیز ہوں سب کو پر ضرورتوں کے لئے
.. View More
Visit 2 Other Poetries by Asif Jaleel »

Reviews & Comments

excellent description about women rights in poetry.

By: shah Nawaz Bokhari, Rawalpindi on Aug, 29 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City