تاج محل ( ساحر لدھیانوی کی ایک شاہکار نظم)

Poet: SAHIR LUDHIANVI
By: IRAM, Lahore

تاج تیرے لئے اک مظہر الفت ہی سہی
تجھ کو اس وادی ء رنگیں سے عقیدت ہی سہی

میری محبوب ! کہیں اور ملا کر مجھ سے

بزم شاہی میں غریبوں کا گزر کیا معنی
ثبت جس راہ میں ہوں سطوت شاہی کے نشاں
اس پہ الفت بھری روحوں کا سفر کیا معنی ؟

میری محبوب ! پس پردہ تشہیر وفا
تو نے سطوت کے نشانوں کو تو دیکھا ہوتا
مردہ شاہوں کے مقابر سے بہلنے والی
اپنے تاریک مکانوں کو تو دیکھا ہوتا

ان گنت لوگوں نے دنیا میں محبت کی ہے
کون کہتا ہے کہ صادق نہ تھے جزبے ان کے
لیکن ان کے لئے تشہیر کا سامان نہیں
کیونکہ وہ لوگ بھی اپنی ہی طرح مفلس تھے

یہ عمارات و مقابر ، یہ فصیلیں یہ حصار
مطلق الحکم شہنشاہوں کی عظمت کے ستوں
سینہ ء دہر کے ناسور ہیں کہنہ ناسور
جزب ہے ان میں ترے اور مرے اجداد کا خوں

میری محبوب ! انہیں بھی تو محبت ہو گی
جن کی صنائی نے بخشی ہے اسے شکل جمیل
ان کے پیاروں کے مقابر رہے بے نام و نمود
آج تک ان پہ جلائی نہ کسی نے قندیل

یہ چمن زار ،یہ جمنا کا کنارہ ، یہ محل
یہ منقش درو دیوار ، یہ محراب ، یہ طاق
اک شہنشاہ نے دولت کا سہارہ لے کر
ہم غریبوں کی محبت کا اڑایا ہے مزاق

میری محبوب ! کہیں اور ملا کر مجھ سے

Rate it:
08 Mar, 2013

More Sahir Ludhianvi Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: IRAM
Visit 12 Other Poetries by IRAM »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Taj is the most famous Nazam by Sahir Ludhyanwi, I think it is never go wrong that he is the most famous only due to this Nazam, I feel happy to see in this page.

By: mehtab, khi on Jan, 01 2016

تاج محل کی تعمیر کے ۳۵۰ سال مکمل ہونے کے موقع پر میں نے اس شاہکار نظم کی پیروڈی لکھی تھی جو اردو اکیڈمی، دہلی کے رسالہ ایوان اردو کی فروری ۲۰۰۶ کی اشاعت میں شامل ہے۔ دوست محمد خان

ہوٹل تاج محل

تاج تیرے لئے اک محورِ الفت ہی سہی
تجھ کو اس لکژری ہوٹل سے محبت ہی سہی

‘‘میری محبوب ! کہیں اور ملا کر مجھ سے’’

مہنگے ہوٹل میں غریبوں کا گزر کیا معنی
جس کے درباں بھی ہوں ملبوسِ شہنشاہی میں
اس میں لٹھے کے پجاموں کا سفر کیا معنی

میری محبوب پسِ پردۂ فائیو اسٹار
لوٹنے والی دکانوں کو تو دیکھا ہوتا
مہنگے ہوٹل کے کبابوں سے بہلنے والی
عشق کے اور ٹھکانوں کو تو دیکھا ہوتا

ان گنت جوڑوں نے باغوں کی زیارت کی ہے
‘‘کون کہتا ہے کہ صادق نہ تھے جذبے ان کے’’
قیس و لیلیٰ بھی کبھی جانبِ ہوٹل نہ گئے
‘‘کیونکہ وہ لوگ بھی اپنی ہی طرح مفلس تھے’’

یہ عمارات و منازل، یہ پلازہ، یہ بہار
فارغ البال امیروں کے لئے جائے سکوں
اس کی رقاصہ کے رنگین تبسم پہ نہ جا
اس میں شامل ہے مرے جیسے ہی عشاق کا خوں

‘‘میری محبوب انہیں بھی تو محبت ہوگی
جن کی صناعی نے بخشی ہے اسے شکلِ جمیل’’
ان کے پیاروں نے تو دیکھے بھی نہیں سیخ کباب
آج تک ان کوکھلایا نہ کسی نے اک مِیل

یہ مِنی بار، یہ لابی کا نظارہ، یہ مہک
روسٹیڈ، روغنی، دم پخت غذاؤں کے طباق
شوخ تجّار نے دولت کا سہارا لے کر
‘‘ہم غریبوں کی محبت کا اڑایا ہے مذاق’’

‘‘میری محبوب! کہیں اور ملا کر مجھ سے’’


By: Dost Mohammed Khan, Delhi on Apr, 01 2013

thanks behna
bohat accha kalam hai
www.oururdu.com

By: munawar, lahore on Mar, 22 2013

Iram meri jaan !
Aaj tu aap ne Sahir ka kalam paish kar ke dil choo lia.
Kia ghazab ka intikhab hai aap ka.Kia bat hai Sahir
Sahib ki.------------------------------------------------
Un ka kalam tu aisa lajawab hota hai ke us ki misal nahin
di ja sakti...................................................................
Yeh shahkaar kalam paish kar ke aap ne rooh taza kar di.
School ke zamaney se hi main sahir ke kalam ki diwani thi
aur yeh ab tak qayam hai.------------------------------------
Itne barrey inqalbi aur tarraqqi pasand shayar ki shayari ko
hum barrey hi adab se kharaj e aqeedat paish kartey hai aur
dil ki geraee se aap ka shukria ke aap ne un ginat purani yadain
phir se taza kar dein.
Khush rahiye
Jeetee rahiye
Amin

By: Azra Naz, Reading UK on Mar, 09 2013

Azra sahiba aap key comments parh kar meri narazgi door ho gaee aap bohat achi hein shukria aap ney meri choice ko sraha.be happy
By: Iram, Lahore on Mar, 09 2013

ارم صاحبہ آج آپ نے اس قدر دل خوش کیا
کہ دل چاہتا ہے آپ کا منہ میٹھا کراؤں
ساحر صاحب کی ناقابل فراموش ایک
عظیم نظم آپ نے ہمارے ساتھ شئیر کر
کے گویا ہم پہ احسان کیا ہے ۔آپ کا بے
حد شکریہ۔امید ہے اسی طرح لیجنڈز کا
کلام ویب پر بھجواتی رہیں گی۔آپ کی
چوائس بہت اچھی ہے
الللہ آپ کو سدا شادو آباد رکھے،آمین

By: dr.zahid sheikh, lahore,pakistan on Mar, 09 2013

Thank you Dr.Zahid g mughey be had khushi huee aap key comments parh key.mein aynda bhi acha acha klaam web par bhejti rahun gi.bohat bohat shukria aap ney bohat izat di hai mughey be happy Zahid g
By: Iram, Lahore on Mar, 09 2013

nice choice Iram khush rehien
Asghr

By: asghar, birmingham on Mar, 09 2013

Ap ka bohat shukria Asghar sahib
By: Iram, Lahore on Mar, 09 2013
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City