تم اتنے سنگدل کیسے ہو؟

Poet: Seyyed Shakir Hassan Bukhari
By: Seyyed Shakir Hassan Bukhari, LAHORE

تم اتنے سنگدل کیسے ہو
مجھے اتنا رُلاتے ہو
میں جب بھی پاس آتا ہوں
تم مجھ سے دور جاتے ہو
جب مجھ سے روٹھ جاتےہو
میرا دل ٹوٹ جاتا ہے
تم اتنے سنگدل کیسے ہو
مجھے اتنا رُلاتے ہو
سنو تم لوٹ آو نا
مجھے اتنا ستاو نہ
مجھے پھر سے رلاو نہ
میری اک بات مانو تم
کہ اب کی بار تم مجھ کو
کوئی دھوکہ نہیں دو گے
تم اتنے سنگدل کیسے ہو
مجھے اتنا رُلاتے ہو
تمھارےعشق کی خاطر
حصول قرب کی خاطر
میں اپنی جان دے دوں گا
زمانہ بات کرتا ہے
تو اُس کو بات کرنے دو
مجھے تو حوصلہ تم دو
مجھے تو پیار کرنے دو
تم اتنے سنگدل کیسے ہو
مجھے اتنا رُلاتے ہو

Rate it:
17 Jun, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Seyyed Shakir Hassan Bukhari
Visit Other Poetries by Seyyed Shakir Hassan Bukhari »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City