جو بن کر آنکھ میں ڈوبا رواں سے

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

ہوئے آسان یہ جیون کہاں سے
یہ کس احساس کو دیکھا عیاں سے

جو اک طوفاں ہے اپنی خامشی میں
جو بن کر آنکھ میں ڈوبا رواں سے

اک اس کی ہی کمی رہتی ہے ورنہ
جو آ نکلا کبھی اس کا جہاں سے

سناؤں کیا میں اپنے غم کے قصے
تمہارے وعدے اب خطرہ دھواں سے

مجھے معلوم ہے رستہ تمہارا
غموں کا دیکھ کر یہ آسماں سے

ہمارا انتظار اب بھی ہے قائم
ابھر آتا ہے دل سویا بیاں سے

ہماری آنکھ میں ہے حسرتِ دید
میں وحشت لے چلی صحرا جواں ہو

اتر کر دل کے آئینوں میں وشمہ
کہیں جھونکا ہوا کا یہ سماں سے

Rate it:
04 Jan, 2019

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4524 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City