جو بھی مل جائے۔۔۔۔۔۔۔

Poet: m.asghar mirpuri
By: m.asghar mirpuri, birminghaham

جو بھی مل جائے اسی پہ قناعت کرتا ہوں
خدا سے کب زیادہ کی حسرت کرتا ہوں

میرےدامن میں اس کے سوا کچھ نہیں
دنیا میں تقسیم محبت کی دولت کرتا ہوں

دل گرآنکھوں میں کوئی چہرہ بسالے
میں کبھی نا اس سے بغاوت کرتا ہوں

گمراہ لوگ حق بات نظرانداز کرتےہیں
میں انہیں اچھےکاموں کی ہدایت کرتابوں

جب وہ دل کی محفل میں مدعوکرتےہیں
میں ان کے دل میں برپا قیامت کرتا ہوں

Rate it:
08 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: m.asghar mirpuri
Visit 7419 Other Poetries by m.asghar mirpuri »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City