خاموش فضا تھی کہیں سایہ بھی نہیں تھا

Poet: Kusar Samreen
By: Tariq Baloch, hub chowki

خاموش فضا تھی کہیں سایہ بھی نہیں تھا
اس شہر میں ہم سا کوئی تنہا بھی نہیں تھا

اونچی سی حویلی میں اترتا رہا شب بھر
کٹھیا میں میری چاند نے جھانکا بھی نہیں تھا

کس جرم میں چھینی گئیں مجھ سے میری آنکھیں
اِن میں تو کوئی خواب سجایا بھی نہیں تھا

منصف میرا مجرم کا طرف دار بنے گا
اس طرح تو میں نے کبھی سوچا بھی نہیں تھا

ہم جس کے حوالے سے ہوئے شہر میں بدنام
اُس شخص کو ہم نے کبھی دیکھا بھی نہیں تھا

ثمرین! وہی شخص ہمیں چھوڑ چلا ہے
جس کا کہ بچھڑنے کا ارادہ بھی نہیں تھا

Rate it:
18 Nov, 2010

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Tariq Baloch
zindagi bohot mukhtasir hai mohobat ke liye
ise nafrat me mat ganwao.....
.. View More
Visit 1648 Other Poetries by Tariq Baloch »

Reviews & Comments

بہت خوب. بہت تلاش کیا مجھے یہ صحیح صورت نہ مل سکا. مہربانی

By: Waseem Sadiq, Hub Choki on Sep, 03 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City