درد

Poet: حرا عمیر
By: Hira Umair, Karachi

ہم بھی کمال کرتے ہیں
غم بھی سہہ لیتےہیں
اُف بھی نہیں کرتے ہیں
آنسو بھی چھپا لیتے ہیں
مُسکراہٹ بھی سجا لیتے ہیں
ہر رات یونہی ہم مرتے ہیں
ہر صبح یونہی پھر جی لیتے ہیں
جب درد کی ٹیسیں اُٹھتی ہیں
ہنس ہنس کہ درد کو سہتے ہیں
پاگل سے جو ہم دکھتے ہیں
کُچھ اپنوں کی مہربانی ہیں
دھوکے جو میں نے کھاۓ ہیں
جو تکلیفیں میں نے اُٹھائ ہیں
وہ سبق مجھے دے گئ ہیں
نہ ہوتا کوئ کسی کا ہیں
سب جھوٹ اور فریب ہیں
اب میں نے یہ جان لیا ہے
نہ رکھنی کسی سے اُمیدِ وفا ہے

Rate it:
18 Jun, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Hira Umair
Visit 8 Other Poetries by Hira Umair »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City