رشتوں کی کمیٹی ڈالی تھی

Poet: ثناءبنتِ زمان
By: sanabintezaman, abbottabad

رشتوں کی کمیٹی ڈالی تھی
ہر رشتے کی اپنی باری تھی
طے ہوا تھا کریں گے بھروسہ پیار
خیال وقت احساس اور اعتبار
نہ چھوڑیں گے تنہا کسی رشتے کو
رشتوں کی کمیٹی ڈالی تھی
ہر رشتے نے کرنی وفاداری تھی
گزرا ہر اک کا نمبر اچھے سے
ساتھ دیا ہم نے ہر ایک کا جان دینے تک
رشتوں کی کمیٹی ڈالی تھی
ہر رشتے کی اپنی ذمہ داری تھی
بات بگڑی جب آئی ہماری باری تھی
وصولی تھی چاہی صرف کچھ پل کے ساتھ کی
جانے دغا دے کر ہی کیوں اوقات دکھانی تھی
رشتوں کی کمیٹی ڈالی تھی
ہر رشتے کی اپنی کہانی تھی
محبت وفا اب بات پرانی ہے
رشتوں کی کمیٹی میں بس اب ضرورت باقی ہے
رشتوں کی کمیٹی ڈالی ہے
جو اب صرف وقت گزاری ہے

 

Rate it:
16 Sep, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: sanabintezaman
Visit 4 Other Poetries by sanabintezaman »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Apki poetry boht ache h sir

By: Kubra khan, Mianwali on Oct, 12 2019

sir ap ki ya poetry recod kr rha hun apny studio m,ain

By: RJ Mirza, multan on Sep, 18 2019

میرے سینے سے لگ کر سن وہ دھڑکن

جو ہر پل تعرے ملنے کا درد کرتی ہے
Urdu Best Poetry

By: imran, karachi on Sep, 17 2019

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City