رونا بھی اگر چاہوں تو رویا نہیں جاتا

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

احساس زیاں چین سے سویا نہیں جاتا
رونا بھی اگر چاہوں تو رویا نہیں جاتا

ساحل کی نگاہوں میں کوئی درد ہے ایسا
موجوں کو مری ناؤ ڈبو یا نہیں جاتا

کیا جانیے کس بات پہ دشمن ہوا موسم
سرسبز کسی شاخ کا ہویا نہیں جاتا

لرزاں ہے کسی خوف سے جو شام کا چہرہ
پھر دل میں وہ چاہت کو جگایا نہیں جاتا

ڈوبا ہے جو ہر خواب تو اب اس سے گلہ کیا
جس نے مری پلکوں پہ بہایا نہیں جاتا

اب موسمِ باراں کی تڑپ ہے مجھے لیکن
برسات کی آنکھوں میں بہایا نہیں جاتا

قندیل وفا بن کے سلگتی میں رہی ہوں
وشمہ تری آنکھوں سے پکارا نہیں جاتا

Rate it:
04 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4524 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City