غزل

Poet: نواب رانا ارسلان
By: نواب رانا ارسلان, Ismailabad, Umerkot

حریفانہَ ء درویش تو خود کو ہی نقصان دیتے رہے
چھوٹی چھوٹی آرزؤں کی خاطر اپنا ایمان دیتے رہے

ہمیں کیا ضرورت کہ یہ لاگ ہم بھی نبھائیں
یہ تو خود کہ ہی خلاف بیان دیتے رہے

سُنو ہمیں پتہ ہے تمہارا ہر اک وار
جو تم اپنی طرف سے ہو کر انجان دیتے رہے

ہمیں وجود ملا کوئی فرق نہ پڑا
لوگ آئینہ دیکھ کر جان دیتے رہے

ہمارا حوصلہ ہے صحرا میں اک درویش کی طرح
واھ ارسلؔان ہمیں یہ کیا غم نادان دیتے رہے

Rate it:
08 Apr, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: نواب رانا ارسلان
Visit 28 Other Poetries by نواب رانا ارسلان »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City