مانا کہ سعئ عشق کا انجام کار کیا

Poet: Shamim Karhani
By: ahmad, khi

مانا کہ سعئ عشق کا انجام کار کیا
بے اختیار دل پہ مگر اختیار کیا

ہر ذرہ آشیانۂ دل ہے کہیں ٹھہر
صحرائے زندگی میں تلاش دیار کیا

شاید کہ شہر میں کوئی انسان آ گیا
دیکھو ہجوم سا ہے سر رہ گزار کیا

صدیوں کا زہر پی کے جو سوئے وہ کیا اٹھے
ڈستی ہے زندگی کی خلش بار بار کیا

ہر ذرہ لالہ زار ہے تازہ لہو کی طرح
برسا ہے اس دیار میں ابر بہار کیا

کیوں میری خاک دل کی طرف ملتفت ہیں لوگ
کچھ اب بھی رہ گیا ہے دلوں میں غبار کیا

فردا ہے انتظار میں صدیاں لیے ہوئے
ماضی کے ماہ و سال تمہارا شمار کیا

معمور ہے نشاط غم دل سے زندگی
تجھ کو شمیمؔ فکر غم روزگار کیا

Rate it:
29 Dec, 2016

More Shamim Karhani Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: owais mirza
Visit Other Poetries by owais mirza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City