مجھے شام و سحر آہوں سے چھٹکارا نہیں ملتا

Poet: MUBARIK AHMED
By: Mubarik Ahmed, Sheikhupura

مجھے شام و سحر آہوں سے چھٹکارا نہیں ملتا
امیدو یاس کی راہوں سے چھٹکارا نہیں ملتا

ہزار بار چھوڑا ہے بے بسی کا دامن میں نے
کیا کروں محبت سے مجھے چھٹکارا نہیں ملتا

نہ جانے کیوں دشوار لکتی ہے زندگی اتنی
شب بھر اُس کے خوابوں سے چھٹکارا نہیں ملتا

اُس شخصِ باکمال کی آغوش بھی نصیب نہیں مجھے
دن بھر اشک بہانے سے چھٹکارا نہیں ملتا

وصف کوئی تو ایسا ہے اُس شخص میں مبارک
خیالوں میں بھی اُس کی پوجا سے چھٹکارا نہیں ملتا
 

Rate it:
03 Nov, 2018

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Mubarik Ahmed
Visit Other Poetries by Mubarik Ahmed »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City