ملا تھا ایک ہم سفر نیا کے دیکھتے ہیں ہم

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

ہر ایک بات ذہن میں بسا کے دیکھتے ہیں ہم
ملا تھا ایک ہم سفر نیا کے دیکھتے ہیں ہم

بدل رہا ہے سوز میں جو قہقہہ لگا ہوا
چلے چلو کہ منزلوں ملا کے دیکھتے ہیں ہم

کہانیوں کا روپ دے کے ہم جنہیں سنا سکیں
ہماری زندگی میں ایسے آ کے دیکھتے ہیں ہم

ہماری ساعتوں کے حصہ دار اور لوگ ہیں
ہمارے سامنے نظر ہٹا کے دیکھتے ہیں ہم

کسی کے نام آگیا تھا یونہی درمیان میں
اب اس کا ذکر کیا کریں خدا کے دیکھتے ہیں ہم

بغاوتوں نے توڑ دیں کئی روایتیں مگر
دلوں کے بیچ سلسلہ جڑا کے دیکھتے ہیں ہم

غزل فضا بھی ڈھونڈتی ہے اپنے خاص رنگ کی
ہمارا مسئلہ فقط اٹھا کے دیکھتے ہیں ہم

Rate it:
23 Sep, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4533 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City