نئے خیال کے لفظوں کی شاعری بنکر

Poet: Haya Ghazal
By: Haya Ghazal, Karachi

نئے خیال کے لفظوں کی شاعری بنکر
میں اسکے ہاتھ سے نکلی ہوںاب نئ بنکر

مری حیات کا مقصد بدل دیا اس نے
نکل پڑی ہوں فسانے سے زندگی بنکر

یہ بے قراری نئے کھولتی ہے در مجھ
قرا ر لوٹ رہا ہے وہ آگہی بن کر

دکھارہا ہے اندھیرے میں روشنی مجھکو
ترے فراق کا ہر لمحہ چاندنی بن کر

ٹپک رہاہے مری آنکھ سے لہو کی طرح
لبوں پہ کھیل رہا پے وہ تشنگی بن کر

ستم خزاں کا ہمیں ڈر ہے سہہ نہ پائیں گے
وفا کی آس جگا پھر سے عا شقی بن کر

کبھی تو لوٹ کے آ پھر سے میرے آنگن میں
اتر جا روح میں پھر میری تازگی بن کر

Rate it:
23 Oct, 2015

More Urdu Ghazals Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Haya Ghazal
I am freelancer poetess & witer on hamareweb. I work in Monthaliy International Magzin as a buti tips incharch.otherwise i write poetry on fb poerty p.. View More
Visit 133 Other Poetries by Haya Ghazal »

Reviews & Comments

شکریہ فرح بہت بہت نوازش

By: Haya Ghazal, Karachi on Nov, 22 2015

beautiful .............. wow ....... love it dear ........... bohoth hi aala wa umda ashar ........... khush rahyai jahan bhi reh yai ............. Jazak Allah Hu Khair

By: farah ejaz, Aaronsburg on Oct, 24 2015

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City