وہ مرے دل کو عداوت سے جلا بیٹھے ہیں

Poet: Zeeshan Lashari
By: Zeeshan Lashari, Kunri

وہ مرے دل کو عداوت سے جلا بیٹھے ہیں
خود مکیں جس کے تھے وہ گھر ہی گرا بیٹھے ہیں

آخرت میں بھی کہاں ان سے کریں گے شکوہ
ہم پہ جو ظلم ہوئے ہم تو بھلا بیٹھے ہیں

فائدہ اب ترے آنے کا بھلا کیا ہم کو
اب تو ہم جینے کی خواہش بھی مٹا بیٹھے ہیں

ہم پہ کیا خاک اثر وعظ کرے گا ناصح
جسم کیا روح کو بھی غم میں پلا بیٹھے ہیں

ان سے ملنے کا خسارہ بھی ذرا دیکھو تو
ایک ہی دل تھا ہمارا وہ گنوا بیٹھے ہیں

ہم نے تو خود پہ بھی کیا ظلم روا رکھے ہیں
سوزِ دل کو بھی تو اک ساز بنا بیٹھے ہیں

گر عیاں ایک بھی ہو حشر بپا ہو جائے
سینکڑوں زخم جو ہم دل میں چھپا بیٹھے ہیں

ہم نے معصوم سے چہرے سے لگایا دل تھا
کیا خبر تھی کہ ستم گر سے لگا بیٹھے ہیں

کون سی بات کا ہم شانؔ ادا شکر کریں
دو گھڑی پاس وہ بیٹھے تو کیا بیٹھے ہیں

Rate it:
15 Oct, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Zeeshan Lashari
Visit 16 Other Poetries by Zeeshan Lashari »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City