کرب کی انتہا سے آشنا کِیا ہے

Poet: UA
By: UA, Lahore

کرب کی انتہا سے آشنا کِیا ہے
وفا شعاری کا یہ تحفہ دِیا ہے

دِل کا نگر بسانے کا اِقرار کر کے
تنہا کر دِیا ہے یہ صلہ دِیا ہے

ان سے ہمیں کوئی شکوہ نہیں
بھروسہ کِیا ، یہ ہماری خطا ہے

دِل بھی ہمارا ہماری طرح ہے
ان سے نہیں کوئی شکوہ گِلہ ہے

سدا خوش رہیں مسکراتے رہیں وہ
ان کے لئے دٰل سے جاری دعا ہے

Rate it:
12 Dec, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: uzma ahmad
sb sy pehly insan phr Musalman and then Pakistani
broad minded, friendly, want living just a normal simple happy and calm life.
tmam dunia mein amn
.. View More
Visit 2990 Other Poetries by uzma ahmad »

Reviews & Comments

بہت خوبصورت غزل ہے۔ بہت مزہ آیا سارے ہی اشعار دل میں اترتے ہوئے محسوس ہوئے،
سدا خوش رہیں
دعا گو
وسیم

By: Wasim Ahmad Moghal, Lahore on Dec, 16 2018

بیحد شکریہ برادرِ محترم اتنی اچحی تعیف کی آپ نے دِل خوش ہو گیا۔ جزاک اللہ ھو خیرا
سدا خوش رہیں اللہ Bless you Always
By: uzma, Lahore on Dec, 19 2018
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City