کوئی بھی اور قصہ اس زباں سےکم سنا سمجھا

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

میں جب بولوں لبوں سے بس تمہارا دل کیا سمجھا
کوئی بھی اور قصہ اس زباں سےکم سنا سمجھا

نہ ملنا، مل کے چھٹ جانا ستم یوں بھی ہے اور یوں بھی
عجب فرقت کا عالم ہے کہ غم یوں بھی ملا سمجھا

وہاں شوق و محبت سے یہاں احساسِ فرقت سے
مرا ہر اشک فانوسِ حرم یوں بھی ہوا سمجھا

تمہاری چاہتوں کے نام سے صبحیں بلاتے ہیں
ادائے بے نیازی سے تمہارا پوچھنا سمجھا

اٹھی ہے ہوک سی دل میں تمہارے لوٹ جانے پر
بہاروں کا ہمارے ہاتھ سے موسم عطا سمجھا

مسلسل رنج سہنے سےبھی آخر ایک دن لوگو
کچھ اپنوں کو پرکھنے کی مہارت ہو ادا سمجھا

وفادوروں کی منڈی میں محبت بک بھی سکتی ہے
دلوں کے بیچ میں وشمہ تجارت ہو سزا سمجھا

Rate it:
30 Sep, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4524 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City