کون بولے گا

Poet: م الف ارشیؔ
By: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi), Karachi

جس کی ہمت ہے وہ ہی بولے گا
جس کو ہونا ہے ساتھ ہو لے گا

آج ہرگز نہ میں رہوں گا چپ
میں نہ بولا تو کون بولے گا

سب کو معلوم ہے کیا ہو گا
دار پر ہو گا جو بھی بولے گا

سب کے ہونٹوں پہ پڑ گئے تالے
میں نہ کھولوں تو کون کھولے گا

رکھ کے سر اپنی ماں کے شانوں پر
ایک بیٹا بھی آج رولے گا

لوگ چاہے یہاں نہیں بولیں
پر یہ بہتا لہو تو بولے گا

میری نسلوں میں تو بتا کب تک
فرقہ بندی کا زہر گھولے گا

آج بھی جو تو چپ رہا ارشیؔ
پھر کوئی بھی زباں نہ کھولے گا
 

Rate it:
08 Dec, 2018

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Muhammad Arshad Qureshi
My name is Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) belong to Karachi Pakistan I am
Freelance Journalist, Columnist, Blogger and Poet.​President of Internati
.. View More
Visit 189 Other Poetries by Muhammad Arshad Qureshi »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City