کھڑی کرتا ہے رستے میں دیوار کہیں کہیں

Poet: Sobiya Anmol
By: Sobiya Anmol, Lahore

کھڑی کرتا ہے رستے میں دیوار کہیں کہیں
شاید اُس کے دل میں ہے پیار کہیں کہیں

گماں ہوتا ہے اُس کی نادان حرکتوں سے
ملتے ہیں محبت کے آثار کہیں کہیں

چپ کے تالے کھلنے لگے ہیں دھیرے دھیرے
چھیڑتا ہے باتوں باتوں میں ذکرِ یار کہیں کہیں

رُلا دیتا ہے مجھے ٗ رو پڑتا ہے خود بھی
بننا چاہتا ہے وہ میرا غم خوار کہیں کہیں

نگاہیں جھکا لیتا ہے محفل میں بیٹھے ہوئے
سجے ہیں اُس دل کے کوچہ و بازار کہیں کہیں

دل میں کیا ہے مگر صاف صاف نہیں کہتا
شاید وہ بھی ہے محبت کا گنہگار کہیں کہیں

Rate it:
25 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: sobiya Anmol
what can I say,people can tell about me... View More
Visit 128 Other Poetries by sobiya Anmol »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City