ھم ہیں بیٹھے تاک لگائے ہوئے

Poet: Mian Ameer Hamza
By: Mian Ameer Hamza, Layyah

ہم ہیں بیٹھے تاک لگائے ہوئے
رقیبب بیٹھے ہیں دھاک میں

نکلیں جو جانب کوچہ جاناں
کہیں ملا نہ دئیے جائیں خاک میں

بہتر ہے کہ خود ہی چلے آئیں
آجائیں چاہیے خواب میں

چلے ہی آئیں کہ اب سکت نہیں باقی
کہیں رو نہ دوں میں اشتیاق میں

دیکھئے اس قدر بیمار کو نہ تڑپائیں
کہیں پکڑے نہ جائیں روز حساب میں

Rate it:
23 Feb, 2019

More Sad Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Mian Ameer Hamza
Visit Other Poetries by Mian Ameer Hamza »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City