ہجر کا وصل کی شب سے ہے گماں سے آئی

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

ہجر کا وصل کی شب سے ہے گماں سے آئی
پاس ہو کر بھی نہیں تُم ہو یہاں سے آئی

بات مشکل تھی جو آسانی سے کہہ دی تُم نے
ہو نہیں پائی وہ چہرے سے عیاں سے آئی

میں وفاو ں پہ تری شک تو نہیں کر سکتی
کوچہ " غیر میں قدموں کے نشاں سے آئی

حال دل اُس کو سنانے کا ارادہ کر کے
کہنے لگتی ہوں، نہیں ہوتا بیاں سے آئی

یوں تو کہتے ہو کہ دوری نہیں حائل کوئی
سات پردوں میں یوں رہتی ہو نہاں،سے آئی

مان لیتی ہوں کہ وشمہ ہے مو حد لیکن
دل میں پھر بھی ہے یہ تصویر کہاں سے آئی

Rate it:
19 Oct, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4528 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City