یہ ہو بھی سکتا ہے جب اس پہ اعتبار کرے

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

یہ ہو بھی سکتا ہے جب اس پہ اعتبار کرے
وہ اپنی ذات کو خود سے الگ شمار کرے

نگا ہ ناز میں قصے نہیں وفا کے میاں
جو دل کی دھڑکن کو پھر سے بے قرار کرے

جو اس کی راہ محبت پہ میرا نام ہے کند
جہان دل کو یہاں کیسے وہ دا غد ار کرے

"میں صرف سایہ ہوں اپنا مگر یہ ضد ہے مجھے"
میں دشتِ آس میں بس تیرا انتظار کرے

وہ چھین سکتا نہیں جگ میں یہ وفا ئیں کیوں کہ
میں تو مر کر بھی یہاں اس پہ جاں نثار کرے

قدم قدم پہ ہیں اس کے لئے یہاں مقتل
یہ بات سچ ہے مگر کیسے آشکار کرے

ہر ایک پل ہی یہاں لوگ درد سہتے ہیں
ہر ایک آنکھ میں آنسو ہی بے شمار کرے

دیار غیر میں رہتے ہوئے یہاں وشمہ
میں اپنے آپ کو کس راہ میں حصار کرے

Rate it:
25 Nov, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4528 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City