سب کی نظروں سے بچا کر میں چھپا سکتے ہیں

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

چل تجھے خواب کی بستی سے چرا سکتے ہیں
سب کی نظروں سے بچا کر میں چھپا سکتے ہیں

روح میں جس نے یہ دہشت سی مچا رکھی ہے
اس کی تصویر گماں بھر تو بنا سکتے ہیں

اشک سے خاک ہوئی تر یہی بس کافی ہے
ایک بے جان سا پیکر تو کھلا سکتے ہیں

دور سے آئی گلی میں کہیں قدموں کی صدا
اپنا گھر چھوڑ کے مجھ کو وہ سنا سکتے ہیں

رات بھر موج ہوا سے تری خوشبو آئی
چاند تاروں میں ترا نقش پا سکتے ہیں

جانے کیوں آ گئی پھر یاد اسی موسم کی
پھر بھی ہاتھوں کو دعاؤں میں اٹھاسکتے ہیں

جس نے وشمہ کو ہواؤں سے بچائے رکھا
ذات کے کرب کو لفظوں میں دبا سکتے ہیں

 

Rate it:
22 Dec, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4524 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City