‎کون کہتا ہے جہاں میں عاجزی ماں باپ ہیں

Poet: Shayan Ghulami
By: Shayan Ghulami, Alipur

‎کون کہتا ہے جہاں میں عاجزی ماں باپ ہیں
‎میں تو کہتا ہوں کہ ہر گھر کی خوشی ماں باپ ہیں

جو مہکتی ہے گلابوں کی طرح اولاد میں
گلشنِ قدرت کی ایسی تازگی ماں باپ ہیں

مجھ کو لگ سکتی نہیں ہے اِس زمانہ کی نظر
میں ہوں خوش قسمت میرے سر پر ابھی ماں باپ ہیں

‎بھیج کر ماں باپ کو گھر سے اندھیرا مت کرو
‎یہ حقیقت ہے کے گھر کی روشنی ماں باپ ہے

بھول کر ماں باپ کو کیوں پھر رہے ہو دربدر
زندگانی کا خزانہ واقعی ماں باپ ہیں

زندگی قربان کردی جس نے بچوں کے لئے
اب تو سمجھو دوستو کتنے سخی ماں باپ ہیں

کوئی سمجھے یہ نہ سمجھے شاعری شایان یہ
میرا دل کہتا ہے میری زندگی ماں باپ ہیں

Rate it:
19 Mar, 2016

More Father Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Shayan Ghulami
HI MY NAME IS SYED SHAYAN ABBAS
I'm a Pharmacist working as a Medical Representative living in Abu Dhabi (UAE).I enjoy my job because I interact with
.. View More
Visit 48 Other Poetries by Shayan Ghulami »

Reviews & Comments

Awesome brother!

By: Abbas, Abudhabi on Apr, 20 2016

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City