اداکاراؤں کے پسندیدہ۔۔ ہر لباس پر جچیں اور خوبصوت لگیں، یہ رنگ برنگی کھسے

کھسے ہماری روایات و ثقافت کا ایک اہم حصہ ہیں۔ جنہیں مختلف ادوار میں تیار کیا جاتا رہا ہے۔ ویسے تو کھسوں کا فیشن کبھی پُرانا نہیں ہوتا۔ یہی وجہ ہے کہ ہر زمانے میں تیار کئے جاتے رہے ہیں۔ گزشتہ کچھ عرصے کے دوران ان کھسوں کی مانگ بڑھتی ہوئی دکھائی دی ہے. اس کی ایک وجہ پاکستانی اداکاراؤں کی جانب سے ان کھسوں کا استعمال کرنا ہے۔ حرا مانی ہوں یا عائزہ خان، حنا الطاف ہوں یا مایا خان، منال خان ہوں یا ایمن خان سب ہی وقتاً فوقتاً مختلف طرح کے کھسے پہنتی دکھائی دی ہیں ۔

عائزہ اور ایمن خان تو کھسے پہننے کی بہت دیوانی ہیں، یہی وجہ ہے کہ انہوں نے سوشل میڈیا پر اپنے پاس موجود کھسوں کی تصاویر بھی شئیر کیں، جن کی تعداد کو دیکھ کر اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ کھسے ان دونوں کو کتنے پسند ہیں۔ اب بھی کئی ڈراموں کے دوران آپ کو یہ اداکارائیں ہر طرح کے ملبوسات کے ساتھ کھسے پہنتی دکھائی دیں گی۔ یہی وجہ ہے کہ اب کھسوں کی مانگ اور ان کی قیمت دونوں میں ہی اضافہ ہورہا ہے۔

ابتدا میں تو صرف سنہری یا سلور کھسے تیار کئے جاتے تھے تاکہ شادیوں کے ملبوسات کے ساتھ وہ میچنگ کر جائیں۔ پہلے پہل ”ملتانی کھسے“ زیادہ مشہور تھے ۔ لیکن چونکہ اس کی کڑھائی اور اسے بنانے میں محنت بہت لگتی تھی، اس لئے اس کے کاریگر کم ہوتے گئے، اب یہ کھسے مل تو جائیں گے لیکن کم دکانوں پر ہی دستیاب ہوں گے اور ان کی قیمت عام کھسوں سے زیادہ ہوگی۔

ان دنوں تو سینتھیٹک چمڑے سے تیار کردہ سادہ کھسے زیادہ پسند کئے جا رہے ہیں، کیونکہ اصلی چمڑے سے تیار کردہ کھسے بہت مہنگے ہوتے ہیں، اس کے علاوہ کچھ ڈیزائنرز نے ٹرک آرٹ والے کھسے بھی متعارف کروانے کا سلسلہ شروع کیا، جو کہ لڑکیوں میں بہت پسند کیا گیا ہے۔ ان دونوں انداز کے کھسوں کو عام دنوں میں باقاعدگی سے پہنا جاسکتا ہے۔

شادی بیاہ کی تقاریب کیلئے مختلف برانڈز کی جانب سے مخمل پر کورے، دبکے، موتیوں کا کام کیا جاتا ہے۔ سوشل میڈیا پر ایسے کئی ہیں جو لڑکیوں کو ان کی پسند کے مطابق میچنگ کھسے تیار کرکے دے رہے ہیں ۔ شادیوں کی تقریبات کیلئے اگر لڑکیوں کو کھسے خریدنے ہیں تو سلور یا سنہری رنگ کے کندن کے کھسے بھی بہترین انتخاب ثابت ہوں گے۔

اس کے علاوہ آج کل شیشہ ورک کے ملبوسات فیشن میں اِن ہیں تو ان کے ساتھ میچنگ کرکے شیشوں والے کھسے خرید لئے جائیں ۔ یہ مارکیٹ میں بہ آسانی دستیا ب ہیں ۔ شادی بیاہ کیلئے تیار کئے جانے والے کندن، مخمل، کورے دبکے، ستارے اور شیشے والے کھسوں کی قیمت ہزاروں میں ہوتی ہے۔

دکانداروں کا کہنا ہے کہ اس میں مہنگے نگینے، کندن وغیرہ لگائے جاتے ہیں،کچھ کھسوں کے درمیان میں گھنگھرو بھی لگائے جاتے ہیں، دبکے کا کام کیا جاتا ہے، اس لئے محنت بھی زیادہ لگتی ہے اور مٹیریل بھی مہنگا ہوتا ہے، اس لئے انہیں ان کھسوں کو مہنگے داموں فروخت کرنا پڑتا ہے۔ یہ کھسے کم سے کم 2ہزار روپے میں مل سکتے ہیں۔

بنارسی کپڑے سے تیار کردہ سادہ کھسے بھی لڑکیوں میں مقبول ہیں، یہ فراکس اور لہنگوں کے ساتھ پہنے جائیں تو خوبصورت لگتے ہیں۔ ایسا نہیں ہے کہ کھسے صرف مشرقی ملبوسات کے ساتھ پہنے جائیں، لڑکیاں چاہیں تو انہیں ڈینم جینز کے ساتھ بھی پہن سکتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ آج کل لڑکیاں کالج اور جامعات میں بھی کھسے پہنتی دکھائی دیتی ہیں۔

سینڈلز یا فلیٹ پمپس سے موازنہ کیا جائے تو یہ کھسے کم قیمت ہوتے ہیں۔ مقامی مارکیٹ میں آپ کو 300سے لے کر ایک ہزار کی قیمت میں بہترین کھسے مل سکتے ہیں، اسلئے کہا جاسکتا ہے کہ یہ دیگر سینڈلز اور چپلوں یا پمپس کی نسبت قیمت میں کم بھی ہوتے ہیں لیکن پہننے میں یہ اسٹائلش ہوتے ہیں.

YOU MAY ALSO LIKE :