1500 روپے میں بغیر گیس اور بجلی کے چلنے والا چولہا۔۔ ایسا سستا چولہا جس سے اب گیس کی لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ ہی نہیں

image

کراچی شہر سمیت ملک بھر کے مختلف حصوں میں شہریوں کو موسم سرما میں گیس کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ تاہم دن بھر گیس نہ ہونے اور بجلی سے چلنے والے مہنگے چولہوں سے پریشان افراد کیلئے ایک انتہائی بہترین اور سستا چولہا مارکیٹ میں دستیاب ہے۔ آج ہم آپ کو بتائیں گے کہ یہ چولہا کیسے کام کرتا ہے اور مارکیٹ میں آپ کو کتنے روپے تک باآسانی مل سکتا ہے۔

بغیر بجلی اور گیس سے چلنے والے اس چولہے کو استعمال کرنا بہت آسان ہے، دراصل اس میں ایندھن کے طور پر بایوماس بریکیٹس (Biomass Briquettes) استعمال کیے جاتے ہیں۔ جبکہ ایک کلو گرام بایوماس بریکیٹس کی قیمت صرف 40 روپے ہے جو کہ 1 گھنٹے تک چولہے کو جلائے رکھیں گے۔

اگر ان چولہوں کی قیمت کے حوالے سے بتایا جائے تو مارکیٹ میں مختلف ماڈل میں دستیاب ہیں، جن میں 10 ہزار سے لے کر 13 ہزار روپے کے درمیان آپ کو یہ چولہا باآسانی مل سکتا ہے۔

استعمال کرنے کا طریقہ

یہ چولہا اسٹیل کا بنا ہوتا ہے اور اس میں لکڑی کے بلٹ ڈال کر آگ سلگائی جاتی ہے۔ آگ سلگانے سے پہلے اس میں مٹی کے تیل کا ہلکا سا اسپرے کیا جاتا ہے اور اس میں لکڑی کے بلٹس ڈالے جاتے ہیں۔ جیسے ہی آگ جل جائے اسے ناب کے زریعے کم یا زیادہ بھی کیا جاسکتا ہے۔ چولہے میں ایک چھوٹا پنکھا فٹ ہوتا ہے جو چولہے کو ہوا فراہم کرتا ہے۔

چولہے کے بلٹس صرف 30 روپے کے ملتے ہیں جو ایک دن کے لئے کافی ہیں اور اس کا ماہانہ خرچہ 1500 ہے۔ اس چولہے کی سب سے اچھی بات یہ ہے کہ یہ نہ برتن کالے کرتا ہے اور نا ہی زیادہ گیس بناتا ہے۔ اس وقت مارکیٹ میں یہ سولر چولہا کم از کم 5 ہزار جبکہ زیادہ سے زیادہ 17 ہزار روپے میں مل جائے گا۔


مزید خبریں
سائنس اور ٹیکنالوجی
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.