تیل جذب کئے بغیر پکوڑنے تلنے کا آسان طریقہ جانیے تاکہ چکنائی سے پیدا ہونے والی بیماریوں سے بچ سکیں اور اس کے ساتھ ساتھ تیل کی بھی بچت ہوسکے

image
کہتے ہیں پکوڑے کھانے کا کوئی وقت کوئی موسم نہیں ہوتا ،یہ تو جب موڈ بن جائے کھا لئے جاتے ہیں ،خاص کر برسات کے موسم میں ،رمضان میں یا اکثر شام کی چائے کے ساتھ ۔ اسی لئے بازار میں بھی سارا سال ہی پکوڑے بآسانی مل جاتے ہیں ،گھر میں بنانے کا دل نہ بھی چاہ رہا ہو تو بازار سے لا کر کھا لئے جاتے ہیں۔ کچھ لوگ پکوڑے کھانے سے اس لئے گھبراتے ہیں کہ اس میں تیل بہت ہوتا ہے اور اس کو کھا کر وزن بہت بڑھ جاتا ہے، توہم آپ کی اس مشکل کو بھی آسان کر دیتے ہیں ،اس ٹپ کو آزما کر آپ جتنے مرض چاہے پکوڑے کھائیں، آپ کو تیل سے ڈرنے کی ضرورت نہیں رہے گی۔

ٹپس:

بیسن گھولتے وقت اس میں ایک چائے کا چمچ تیل ملا لیں ،اس سے پکوڑوں میں تیل جزب نہیں ہوتا۔

پکوڑے تلتے وقت گرم ہوئے تیل میں ایک چٹکی نمک ڈال دیں ،اس سے پکوڑوں میں تیل جزب نہیں ہوگا۔

چاول کے پکوڑے:

بیسن تین چوتھائی کپ

ادرک(باریک کٹی ہوئی) ایک کھانے کا چمچ

چاول (ابلے ہوئے ) دو کپ

چاٹ مصالحہ ایک چائے کا چمچ

ہری مرچ(باریک کٹی ہوئی) ایک کھانے کا چمچ

نمک حسب ذائقہ

پیاز(باریک کٹی ہوئی) دو عدد

ہرا دھنیا(باریک چوپ کیا ہوا) ایک کھانے کا چمچ

تیل (تلنے کے لیے) حسب ضرورت

ایک پیالے میں بیسن ، ادرک، چاول ، چاٹ مصالحہ ،ہری مرچ، نمک ، پیاز اور ہرا دھنیا ڈال کر خوب اچھی طرح مکس کر لیں اور پانی ڈال کر گاڑھا پیسٹ بنا لیں ۔ کڑاہی میں تیل گرم کر یں اور آنچ درمیانی رکھیں۔ جب تیل گرم ہو جائے توہاتھوں سے یا کسی چمچے کی مدد سے اس آمیزے کو ڈالتے جائیں، ڈیپ فرائی کر لیں۔ یہاں تک کہ رنگ سنہری ہو جائے۔ مزیدار چاولوں کے پکوڑے تیار ہیں۔ ٹشو پیپر پر رکھ کر چٹنی کے ساتھ گرم گرم پیش کر یں۔

WATCH LIVE NEWS