تحفظ خواتین بل پر شدید تنقید مسلم لیگ ن نے اعلی سطح مشاورت کا فیصلہ کر لیا

29 Feb, 2016 نوائے وقت
اسلا م آباد (ابرار سعید/ نیشن رپورٹ) گزشتہ ہفتے پنجاب اسمبلی میں تحفظ خواتین بل کی منظوری پر مذہبی جماعتوں کی شدید تنقید نے مسلم لیگ ن کو پریشان کردیا ہے اور حکمران جماعت نے اب ان پارٹیوں کے تحفظات کو دور کرنے اور بل پر کی جانے والی تنقید کے خلاف میڈیا پر جوابات کے حوالے سے اعلیٰ سطح کی مشاورت کا فیصلہ کر لیا ہے، گزشتہ ہفتے پنجاب اسمبلی میں ’’پنجاب پروٹیکشن آف وہ من اگینسٹ وائلنس بل 2015‘‘ منظور کیا گیا مذہبی رہنمائوں نے اس بل کی کچھ شقوں کو اسلام کے بنیادی تصورات کی خلاف ورزی قرار دیا ہے، ذرائع کے مطابق وزیراعظم نواز شریف نے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور دیگر قریبی سیاستدانوں سے صورتحال کا جائزہ لینے سے متعلق رابطہ کیا ہے، اس حوالے سے مرکزی مذہبی رہنمائوں سے رابطہ کر کے اس بل کے مثبت اثرات کو اجاگر کرنے بالخصوص دیہات میں خواتین پر تشدد روکنے اور روزگار کے مواقع میں خواتین کو ہراساں کئے جانے پر قابو پانے میں اس بل کی افادیت کو بہتر انداز میں پیش کرنے پر غور کیا جائے گا۔ اس بات پر بھی غور کیا جائے گا کہ مذہبی رہنمائوں کے تحفظات کو کس طرح ختم کیا جائے اور اس حوالے سے بل میں کیا ترامیم کرنا ضروری ہے، حکومت کی اتحادی جماعت جمعیت اہلحدیث کے سینیٹر علامہ ساجد میر اور جے یو آئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان اس بل پر کھل کر تنقید کر رہے ہیں، ذرائع کے مطابق ان دونوں رہنمائوں سے پارٹی کے سینئر لیڈر جلد ملاقات بھی کر سکتے ہیں، دوسری طرف سول سوسائٹی کو بھی اس بل کے فوائد کو اجاگر کرنے کیلئے فعال کیا جائے گا۔
 

Watch Live News

 مزید خبریں 
« مزید خبریں

Comments & Reviews

Mumtaz qadri saab ko shaheed kr k mojjooda hakoomat nay apne ap ko zillat ke pastion men geraa leya hay
sheraz Ahmed, chakswari azad kashmir Feb 29, 2016

Post Your Comments
Select Language: