کیا لوگوں میں اب کورونا وائرس کے خلاف لڑنے کی ہمت پیدا ہو چکی ہے؟

کورونا وبا سے دنیا بھر میں اب تک 15 لاکھ افراد متاثر ہوچکے ہیں اور آئے روز مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔

لیکن اب اچھی خبر یہ سامنے آئی ہے کہ جرمنی کے سائنسدانوں نے کورونا وائرس سے پریشان افراد کے لئے کہا ہے کہ ممکنہ طور پر بیشتر آبادی میں اس وبا کے خلاف مزاحمت پیدا ہوچکی ہے۔

اس تحقیق میں یہ دعویٰ کیا گیا کہ درحقیقت توقعات سے زیادہ کورونا وائرس سے متاثرہ افراد اس کے خلاف اپنے اندر مزاحمت پیدا کر چکے ہیں۔

سائنسدانوں کی جانب سے تحقیق کے لئے جرمنی میں اس وبا کے مرکز سمجھے جانے والے قصبے میں لوگوں کا جائزہ لینے کے بعد دریافت کیا کہ ایسے متاثرہ افراد جن میں علامات ظاہر نہیں ہوئیں، ان میں وائرس کے خلاف مزاحمت کرنے والے اینٹی باڈیز موجود تھیں، ان افراد کو کبھی مریض سمجھا ہی نہیں تھا۔

بروز جمعرات اس تحقیق کے ابتدائی نتائج جاری کئے گئے جس سے اشارہ ملتا ہے کہ اس علاقے کی 15 فیصد آبادی میں اس وائرس کے خلاف مزاحمت پہلے ہی پیدا ہوچکی ہے جو سابقہ تخمینے سے 3 گنا زیادہ ہے۔

دوسری جانب نتائج دیکھ کر یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ جرمنی میں اس وائرس سے اموات کا شرح صرف 0.37 فیصد ہے جو حالیہ لگائے جانے والے اندازے سے 5 گنا کم ہے۔

بون یونیورسٹی کی جانب سے کی گئی اس تحقیق میں جرمن ضلع ہینزبرگ کے قصبے گینگلیٹ کو شامل کیا گیا تھا اور وہاں کی تمام آبادی کا مکمل جائزہ لیا گیا۔

اس مقصد کے لئے 400 خاندانوں کے ایک ہزار کے قریب افراد میں اینٹی باڈیز کے ٹیسٹ کے ساتھ انفیکشن کی علامات کو بھی دیکھا گیا۔

ابتدائی نتائج میں دریافت کیا گیا کہ 2 فیصد آبادی کو اس وقت کووڈ 19 کا سامنا ہے اور 14 فیصد میں اس وائرس کے خلاف اینٹی باڈیز پیدا ہوچکی ہیں، یعنی قصبے کے 15 فیصد افراد اب اس وائرس سے محفوظ سمجھے جاسکتے ہیں۔

ماہرین کا کہنا تھا کہ نتائج سے امید پیدا ہوسکتی ہے کیونکہ 15 فیصد کا مطلب ہے کہ کورونا وائرس کے پھیلنے کی رفتار میں بہت کمی آئی ہے۔


WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.

92