Travel & Tourism Articles

Travel & Tourism Articles - When it comes to spending the vacation somewhere travelling comes first in mind, selecting the right destination to enjoy your time is important, you should know about rand.. Read more

Travel & Tourism Articles - When it comes to spending the vacation somewhere travelling comes first in mind, selecting the right destination to enjoy your time is important, you should know about random places to select your vacation. Here you can read articles about random places that will help you to know about the place and spend your good time in vacation.

LATEST REVIEWS

اسکردو٬ کوہ پیماؤں کی جنّت
Ase articles zaroor likhny chahye is se hamary mulk me siyahat ko farogh milega
By: Jawad seyal, Multan on Dec, 08 2018

وادی سون اور اسکی قدرتی مقامات
zabrdast very nice
By: saba, sargodha on Nov, 27 2018

مِصر کی داستان سننے پر مُصِر ہیں اب بھی لوگ
Janab Azaz ul haq Sahib --Ex Deputy General Manager Pakistan Steel had been with me during Egypt visit --He commented as under on Face book about this article
<< Very interesting to read your column and it surprised me that you still have some remarkable memories. May Allah bless you.>>
By: Munir Bin Bashir, Karachi on Nov, 27 2018

مِصر کی داستان سننے پر مُصِر ہیں اب بھی لوگ
جناب احمد صفی صاحب نے فیس بک پر لکھا “ بہت خوب بھائی منیر۔۔۔ مجھ سے اس سے پہلی والی اقساط مس ہو گئیں کیا آپ ان کے لنک فراہم کر سکتے ہیں تاکہ میں محروم نہ رہ جاؤں
بے حد دلچسپ اندازِ بیان ہے
اس وقت کے حالات کی بہترین عکاسی ہے پڑھ کر لطف آگیا۔ واہ وہ
By: Munir Bin Bashir, Karachi on Nov, 26 2018

مِصر کی داستان سننے پر مُصِر ہیں اب بھی لوگ
کتابوں کی نمائش میں وہاں پراشاعتی ادارے ‘ ٹائم -لائف بکس ‘ کی طرف سے شائع کردہ مشہور برطانوی مصنف 'ڈیس مونڈ اسٹی وارڈ ' کی کتابEarly Islam (آغاز اسلام ) بھی نظر آئی - اس میں اسلام ' قران اور پیغمبر اسلام حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و سلم اور کے لئے ستائشی و مداحی کلمات لکھے ہوئے تھے کہ باقی سب الہامی کتابیں تو مختلف زما نوں میں جاری کردہ مذہبی بیانات ' واقعات ' پوئٹری ' وغیرہ پر مشتمل ہیں جو وقتاً فوقتاً مختلف شخصیات کی جانب سے آتی رہیں جب کہ قراں حکیم میں فرد واحد حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وسلم کے ذریعے پیغامات دنیا تک پہنچائے گئے ہیں --- لیکن ایک بات جو مجھے بھلی نہیں معلوم ہوئی اور اب بھی دل میں نا پسندیدگی کے جذبات محسوس ہوتے ہیں وہ تھی اس کتاب میں چند خاکوں کی موجودگی جن میں حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وسلم کی شبیہ دکھانے کی کوشش کی گئی تھی - کاش یہ نہ ہوتی
By: Munir Bin Bashir, Karachi on Nov, 26 2018

لگا ہے مصر کا بازار دیکھو
امجد سلیم علوی صاحب --- جناب محترم مولا نا غلام رسول کے فرزند ہیں - خود بھی صاحب کتاب ہیں - فیس بک پر اس کالم پر تبصرہ کرتے ہوئے کہتے ہیں “ بہت عمدہ مضمون منیر احمد بھائی، لطف آیا۔ بہت معلوماتی۔ اپنی نالائقی کا اندازہ ہوا۔ بھارت اپنی فلمیں بھیج سکتا ہے تو ہم کیوں نہیں؟ اس دور میں تو ہماری فلمیں بھی ٹکر کی تھیں “
By: Munir Bin Bashir, Karachi on Nov, 10 2018

پاکستان ریلوے----ایک انجینئر نے یہ دیکھا
اس ریستوران میں کھانا کھایا تھا -
https://www.facebook.com/454999341236084/photos/a.733964920006190/1435460743189934/?type=3&theater
By: Munir Bin Bashir, Karachi on Nov, 02 2018

یہ نشانی ‘ یہ علامت ‘ محفوظ رہے گی
پرانی نسل محلے میں قائم ‘آنہ لائبریریوں ‘ کو نہیں بھول سکتی - ابرایم جمالی صاحب نے سچل کالج نواب شاہ سے تعلیم حاصل کی - کتابوں کا شوق ہے اسی جذبے بے کے تحت اسی قسم کی ایک لائبریری قائم کی ہے جہاں سینکڑون کی تعداد میں کتابیں موجود ہیں - ان میں ادبی -تاریخی - سیاسی - معاشرتی - رومانی -جاسوسی سب ہی قسم کی کتب شامل ہیں -- فرعون اور اہرام کے بارے میں بھی کچھ کتب ہیں - مشہور محقق عقیل عباس جعفری بھی ان کی لائبریری کا وزٹ کیا ہے -ابرایم جمالی صاحب نے اور ان کے ایک ساتھی نے اس مضمون کو پڑھنے کے بعد لکھا کہ “ بہت اعلی،،،، زبردست کالم،،، “
By: Munir Bin Bashir, Karachi on Nov, 02 2018

بدھا کےدیس میں (قسط نمبر 2)
بہت عمدہ ۔ اگلی قسط کا انتظار ہے
By: Rabia Rehan, Vancouver on Oct, 28 2018

یہ نشانی ‘ یہ علامت ‘ محفوظ رہے گی
جناب عثمان قاضی کوئٹہ سے تعلق رکھتے ہیں اور کئی زبانوں پر دسترس رکھتے ہیں اور اس سے زیادہ تاریخ پر ان کی گہری نظر ہے - انہوں نے فیس بک پر لکھا
=== قران میں اس فرعون کا نام مذکور نہیں ہے جس کے غرق ہونے کا تذکرہ ہے۔---- اکثر تاریخ دان اس پر متفق ہیں کہ اس کا نام "ثُت موسے" تھا۔ ------ اور وہ پندرھویں صدی قبل مسیح میں گزرا تھا۔ رعمسیس کا تعلق تیرھویں صدی قبل مسیح سے بتایا جاتا ہے =
By: Munir Bin Bashir, Karachi on Oct, 28 2018

MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB