آئینوں جب کوئی تصویر دکھانا تو نہیں
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

آئینوں جب کوئی تصویر دکھانا تو نہیں
اصل چہرہ بھی ذرا سامنے لاناتو نہیں ....

اور کیا، دے ہی چکے ہو جو اندھیرے کو شکست
ایک لحظہ کو سہی جوت جگانا تو نہیں

جو بھی آئے ہے خریدے تُجھے ایرا غیرا
گر چکا ہے ترا بھاؤ اُٹھانا تو نہیں

دور ہو زلف رسا کی یہ پریشانی کچھ
اس کو سُلجھاؤ توگُل سے سجانا تو نہیں

اب کے منجدھار میں پتوار کھوئیے چھوڑو
وقت پر بنتی ہے کیا، سیکھے زمانہ تو نہیں

چھوڑ دینا کوئی کھڑکی، کوئی دروازہ کھُلا
گھر مرے دل میں گھٹا تُو جو بنانا تو نہیں

میری توبہ جو محبت میں کروں پھر وشمہ
بس ہے اتنی سی ہی خواہش کہ بچانا تو نہیں

Rate it: Views: 1 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 29 Jun, 2018
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 4354 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.