عاشق کی فریاد
Poet: رعنا تبسم پاشا
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Dallas, USA

بجھ گئے امیدوں کے دیپ اور چراغ
زندگی سکھ کا دے کوئی مجھ کو سراغ

حرماں نصیبی کا لگا ہے دامن پہ داغ
آج کا دن روز محشر سے بڑھ کر سہی

دلِ نامراد پہ ٹوٹی ہے پھر قیامت وہی
آئی ہے تیری یاد ہؤا ہے غضب یہی

کوئی دیکھے کہ آئے ہیں طوفاں کیا کیا
کھو گئے نشیمن لٹ گئے آشیاں کیا کیا

عیاں زخم زخم ہیں نہاں کیا کیا
وقت بُرا سہی آخر کو ٹل جائے گا

اپنا بھی اندازِ زندگی بدل جائے گا
سکوں ملے گا قرار بھی مل جائے گا

تیری یادیں تو میرا ساتھ نہ چھوڑیں گی
جوڑیں گی مجھ کو اور پھر توڑیں گی

میری زیست کے رخ کیا کیا موڑیں گی
مایہ پا کر غریب محبت کو ٹھکرانے والی

دل سے نکلی نہیں دولت کو اپنانے والی
کیسے بھولوں تجھ کو او ہردم یاد آنے والی؟

Rate it: Views: 9 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 08 Aug, 2018
About the Author: Rana Tabassum Pasha(Daur)

Visit 53 Other Poetries by Rana Tabassum Pasha(Daur) »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
sad but heart touching and nice
be happy
By: uzma, Lahore on Aug, 09 2018
Reply Reply to this Comment

عاشق کی فریاد
Poet: رعنا تبسم پاشا

بجھ گئے امیدوں کے دیپ اور چراغ
زندگی سکھ کا دے کوئی مجھ کو سراغ
حرماں نصیبی کا لگا ہے دامن پہ داغ

آج کا دن روز محشر سے بڑھ کر سہی
دلِ نامراد پہ ٹوٹی ہے پھر قیامت وہی
آئی ہے تیری یاد ہؤا ہے غضب یہی

کوئی دیکھے کہ آئے ہیں طوفاں کیا کیا
کھو گئے نشیمن لٹ گئے آشیاں کیا کیا
عیاں زخم زخم ہیں نہاں کیا کیا

وقت بُرا سہی آخر کو ٹل جائے گا
اپنا بھی اندازِ زندگی بدل جائے گا
سکوں ملے گا قرار بھی مل جائے گا

تیری یادیں تو میرا ساتھ نہ چھوڑیں گی
جوڑیں گی مجھ کو اور پھر توڑیں گی
میری زیست کے رخ کیا کیا موڑیں گی

مایہ پا کر غریب محبت کو ٹھکرانے والی
دل سے نکلی نہیں دولت کو اپنانے والی
کیسے بھولوں تجھ کو او ہردم یاد آنے والی؟
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Wylie on Aug, 09 2018
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.