یہ کیا ہے ستم ٗ لُوٹا ہے میرے پیار کو
Poet: Sobiya Anmol
By: sobiya Anmol, Lahore

یہ کیا ہے ستم ٗ لُوٹا ہے میرے پیار کو
نام دیا ہے آوارگی کا میرے انتظار کو

دئیے ہیں آنسو غم کے ٗ توڑا ہے دل
لگائی ہے ٹھیس گہری میرے اعتبار کو

کون لگائے گا مجھے پار اب آ کے
کرے گا کون آسان رستۂ دشوار کو

میں تو مجبور ہوں وفا کے ہاتھوں
کوئی بتا دے جا کے میرے دلدار کو

مجال کیا کہ انتقامِ غم کی سوچوں
اِس طرز سے چاہا میں نے یار کو

نہ آئے اب کے سال میرے گلشن میں
کوئی سندیسۂ الم دے میرا بہار کو

بے چینیوں میں گزریں گے دن و رات
نہ قرار ملے گا کبھی دل بے قرار کو

کہ سہنی پڑیں گی ذلّتیں اب عشق کی
نام ملیں گے طرح طرح کے میری ہار کو

Rate it: Views: 13 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 06 Nov, 2018
About the Author: sobiya Anmol

what can I say,people can tell about me... View More

Visit 112 Other Poetries by sobiya Anmol »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.