عداوت
Poet: م الف ارشیؔ
By: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi), Karachi

یاروں سے کبھی ایسے عداوت نہیں کرتے
اپنوں سے کبھی ایسے بغاوت نہیں کرتے

ہم درد بھی سہہ لیتے ہیں اپنوں سے ملیں جو
خاموش ہو جاتے ہیں شکایت نہیں کرتے

انصاف نہ کر پائیں جو مخلوقِ خدا سے
دنیا پہ کبھی پھر وہ حکومت نہیں کرتے

سجدہ کریں انساں کو یہ ممکن ہی نہیں ہے
ہم تیری کسی طور عبادت نہیں کرتے

ہو ختم وطن سے یہ جہالت کے اندھیرے
کیوں لوگ یہاں ایسی سیاست نہیں کرتے

وہ لوگ کبھی دنیا میں رسوا نہیں ہوتے
جو لوگ امانت میں خیانت نہیں کرتے

کہتے ہیں یہاں لوگ پھر ان کو بھی منافق
جو ظلم تو سہتے ہیں بغاوت نہیں کرتے
 

Rate it: Views: 17 Post Comments
 PREV More Poetry NEXT 
 More General Poetry View all
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 15 Dec, 2018
About the Author: Muhammad Arshad Qureshi

My name is Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) belong to Karachi Pakistan I am
Freelance Journalist, Columnist, Blogger and Poet.​President of Internati
.. View More

Visit 157 Other Poetries by Muhammad Arshad Qureshi »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.