آنکھ  سے  آنکھ   ملاتا  ہے  کوئی
Poet:
By: Shahid Hasrat, Multan

آنکھ  سے  آنکھ   ملاتا  ہے  کوئی
دل کو کھینچے لیے جاتا ہے کوئی

وائے حیرت کہ بھری محفل میں
مجھ  کو  تنہا  نظر  آتا ہے کوئی

صبح کو خنک فضاؤں کی قسم
روز   آ   آ   کے  جگاتا  ہے  کوئی

منظرِ  حُسن  دو  عالم کے نثار
مجھ کو آئینہ دکھاتا ہے کوئی

چاہیے   خود   پہ   یقینِ  کامل
حوصلہ کِس کا بڑھاتا ہے کوئی

سب کرشماتِ تصور ہیں حسرت
ورنہ  آتا  ہے   نہ  جاتا ہے کوئی
 

Rate it: Views: 0 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 09 Jan, 2019
About the Author: Shahid Hasrat

Visit 149 Other Poetries by Shahid Hasrat »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.