یہ آنسو ہمارا نصیب ہیں
Poet: رعنا تبسم پاشا
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Wylie

آپ جن کے قریب ہیں
وہ لوگ خوش نصیب ہیں

آپ مل کر بچھڑ گئے
آپ بھی کتنے عجیب ہیں

شاید کہ آپ بدل گئے
شاید کسی کے قریب ہیں

آپ تو دل نہ دُکھائیے
آپ تو میرے حبیب ہیں

میری محبت آپکے ساتھ ہے
آپ بھلا کب غریب ہیں

بےرُخی رہے گی کب تک؟
خندہ زن سب رقیب ہیں

کوئی مسیحائی کرے گا کیا؟
ہم آپ اپنے طبیب ہیں

کسی سے کوئی گلہ نہیں
یہ دکھ ہمارے نصیب ہیں

کتابِ ہستی بکھر گئی ہے
اوراقِ زندگی بےترتیب ہیں

نارسائی کی اپنے دوش پر
ہم اٹھائے ہوئے صلیب ہیں

بیت چکی ہے فصل ِ بہار
بےبال و پر عندلیب ہیں

رعنا! یہ جدائیوں کے موسم
یہ آنسو ہمارا نصیب ہیں

Rate it: Views: 13 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 12 Jun, 2018
About the Author: Rana Tabassum Pasha(Daur)

Visit 50 Other Poetries by Rana Tabassum Pasha(Daur) »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.