دریا اُداس آنکھ میں شدت عجیب تھی

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

دریا اُداس آنکھ میں شدت عجیب تھی
اک دل ہے میرےپاس محبت عجیب تھی

کتنے طویل ہیں مرے ایّامِ مفلسی
اُس کو ہے میرے حال پہ حیرت عجیب تھی

میرا سکون ، میری وہ خوشیاں خرید کر
کرتا ہے مجھ سے درد کی شرارت عجیب تھی

جس کے سبب کسی کو بھی عزّت نہیں نصیب
پھر بھی وہ سارے شہر میں راحت عجیب تھی

ہر سمت خوں کی بارشیں ، منظر عجیب ہیں
دامن وفا کا دیس میں مزمت عجیب تھی

اس رات کی ہی صبح کا ہم کو یقیں نہیں
اتنی بھی لاجواب طبیعت عجیب تھی

رکھی ہے آپ نے یہاں کانٹوں سے دوستی
وشمہ تمہارے حُسن کی تمازت عجیب تھی

Rate it:
28 Sep, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4522 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City