مرے مکاں میں وہ دیوار و در نہیں آیا

Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

نہ چھین لے کہیں تنہائی ڈر نہیں آیا
مرے مکاں میں وہ دیوار و در نہیں آیا

کبھی کبھی تو ابھرتی ہے چیخ سی کوئی
کہیں کہیں مرے اندر کھنڈر نہیں آیا

وہ آسماں ہو کہ پرچھائیں ہو کہ تیرا خیال
کوئی تو ہے جو مرا ہم سفر نہیں آیا

میں جوڑ جوڑ کے جس کو زمانہ کرتی ہوں
وہ مجھ میں ٹوٹا ہوا لمحہ بھر نہیں آیا

ذرا سا نکلے تو یہ شہر الٹ پلٹ جائے
وہ اپنے گھر میں بہت ہی بے ضر نہیں آیا

بلا رہا تھا وہ دریا کے پار سے اک دن
جبھی سے پاؤں میں میرے بھنور نہیں آیا

نہ جانے کیسی گرانی اٹھائے پھرتی ہوں
نہ جانے کیا مرے کاندھے پہ سر نہیں آتا

چلو وشمہ ذرا کچھ علاج جاں کر لیں
یہیں کہیں پہ کوئی چارہ گر نہیں آیا

Rate it:
11 Oct, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: washma khan washma
I am honest loyal.. View More
Visit 4523 Other Poetries by washma khan washma »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City