کچھ دیر کے بعد

Poet: Syed Zulfiqar Haider
By: Syed Zulfiqar Haider, Dist. Gujranwala ; Nizwa, Oman

ممکن ہے کہ تم ہمیں بھول بھی جاؤ کچھ دیر کے بعد
اگرچہ ہم تو تیری راہوں میں پڑے رہے ہیں

صدمہ تجھ سے بچھڑنے کا جان لیوا ہے میرے لیئے
کیسے ہو احساس اُنہیں جو ہم سے خفا رہے ہیں

نہ بتاتے ہیں سزا میری نہ مجھ سے کوئی گلا کریں
وہ تو ہم سے نہ جانے کیوں انجان رہے ہیں

میری چوٹ پر اُنہیں کیا غم میری تکلیف کا
میرے زخموں پر جو ہمیشہ زخم لگاتے رہے ہیں

کب تک سہیں گے تیری بے رُخی اب چھوڑ بھی دے
اُس کے آس پاس یہی صدا لگاتے رہے ہیں

آنکھ تیری نم رہے دل تیرا بے چین رہے
مجھ کو ہمیشہ یہی بات سناتے رہے ہیں

مرنے کے اب متمنی ہیں جینے سے بے زار ہیں
وہ جو اوروں کو ہنساتے پر خود کا غم چھپاتے رہے ہیں
 

Rate it:
15 Oct, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Syed Zulfiqar Haider
Visit 50 Other Poetries by Syed Zulfiqar Haider »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City