زندگی کے لئے ، سزا ڈھونڈتا ہوں

Poet: اخلاق احمد خان
By: اخلاق احمد خان, کراچی

زندگی کے لئے ، سزا ڈھونڈتا ہوں
میں پھر جینے کی ، وجہ ڈھونڈتا ہوں

پھر کوئی مجھے چھوڑ جائے
بات اس سے کچھ ، جدا ڈھونڈتا ہوں

بہل جاتا ہے دل جلوت میں آکر
سنھبلے نہ کہیں وہ ، جگہ ڈھونڈتا ہوں

ملے وفا سے سرشار کوئی
مُردوں میں جینے کی ، ادا ڈھونڈتا ہوں

اہلِ دل سے آباد ہے سارا جہاں
دِکھے مجھ کو بھی وہ ، نگاہ ڈھونڈتا ہوں

چلا تھا کہاں سے ، جانے کہاں ہوں
راہِ سفر کا ، سرا ڈھونڈتا ہوں

یہ مال و متاع ، حسن و رعنائیاں
بُت دل میں سجا کر ، خدا ڈھدنڈتا ہوں

اخلاق ہر قلبِ بشر پر خدا کی نظر ہے
نظر دل سے ہٹاکر کیا ، بھلا ڈھونڈتا ہوں

Rate it:
17 Oct, 2018

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 83 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City