محبت آوارہ پنچھی ہی تو ہے

Poet: Maria Rehmani
By: Maria Rehmani, Kharian

محبت آوارہ پنچھی ہی تو ہے
جہ ٹھہرا رہے تو دل کا شجر آباد
جو اڑ جائے تو بڑا ویران
محبت مسافر ہی تو ہے
جو مل جائے تو دل کی گلیاں شادمان
جو کھو جائے تو بڑی سنسان
محبت تتلی ہی تو ہے
جو پھولوں کے اس نگر کبھی اس نگر
جس سے ہر خوشبو ہے مہکی مہکی
ہر پھول ہے اجلا اجلا
جو نہ ہو تو ہر خوشبو ہے بے خوشبو
ہر پھول ہے افسردہ افسردہ
محبت احساس ہی تو ہے
جس سے بنا ہے ہر رشتہ مضبوط
جو نہ ہو تو
ہر رشتہ ہے بے اماں بے یقیں
محبت سفر ہی تو ہے
جس سے قائم ہے مسافتوں کی گردش
جو نہ ہو تو
ہر رستہ ہے کھویا ہوا
ہر منزل ہے لا حاصل
محبت سانس ہی تو ہے
جو چلے تو زندگی
جو رک جائے تو
کچھ بھی نہیں

Rate it:
19 Oct, 2018

More Love / Romantic Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: maria rehmani
Maria Rehmani from Kharian.. View More
Visit 32 Other Poetries by maria rehmani »

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City