طبیعت کے خلاف تھی پر ، خودسری سکھادی

Poet: Akhlaq Ahmed Khan
By: Akhlaq Ahmed Khan, Karachi

طبیعت کے خلاف تھی پر ، خودسری سکھادی
مجھے افسروں نے ، افسری سکھادی

درس برابری کا کس طرح میں دیتا
جب مجھ کو درسگاہ نے ہی ، برتری سکھادی

پوچھا جو کسطرح مسلئے کو طول دوں میں
تو کاروائی مجھ کو ، دفتری سکھادی

کہا جو مجھ کو کوئی جادوئی ہنر دو
تو سرکاری ملازمت کی مجھے ، حاضری سکھادی

سرکاری محکموں میں میری کوئی سنتا ہی نہیں امّاں
کیوں مجھ کو زباں تو نے میری ، مادری سکھادی

فنونِ عالم کا مجھے ماہر بنادیا
قرآں کی بات بس یونہی ، سرسری سکھادی

شکریہ اے طفلِ کاں میں ازاں دینے والے
شروعات میں ہی بات تو نے ، آخری سکھادی

اخلاق جب دعا میں جینے کا ڈھنگ مانگا
قدرت نے مجھ کو بندہ ، پروری سکھادی

Rate it:
27 Oct, 2018

More General Poetry

POPULAR POETRIES

FAMOUS POETS

About the Author: Akhlaq Ahmed Khan
Visit 83 Other Poetries by Akhlaq Ahmed Khan »
Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City
Language:    

My Page! Account Login:

(Post your Comments Immediately)
Email
Password
Do not have MyPage! account? Create Now

Guest Login:

(Comments will be online after Moderator Review)
Name
Email
City